HRPA STATE MEMBERS

A human reading a powerpoint presentation

human rights issues

Ram navami ke din Shamim Ahmed ne Hindu bhaiyo ko khilakar insaniyat ki misaal dia


رام نومی کے دن شمیم احمد نے ہندوبھائیوں کو کھلاکر انسانیت کا درس دیا حالاتِ بنگال نیوز کولکاتا: ایک ایسے موقع پر جہاں رام کے نام پر بنگال, بہار اور ملک کے دیگر حصوں میں نفرت اور دشمںنی کا ننگا ناچ دیکھا گیا۔ رام نومی کے جلوس کے نام پر مسلمانوں کیخلاف اشتعال انگیز ڈی جے اور نعرے لگاکر ملک کے گنگا جمنی تہذیب کو ختم کرنے کی کوشش کی گئی وہیں اسی رام نومی اپنے ہندوبھائیوں کی خوشیوں کو دوبالا کرنے کیلئے کلکتہ کے سڑکوں پر گھوم گھوم کر ہیومن رائٹس پروٹیکشن ایسوسی سی ایشن کے سربراہ شمیم احمد نے انہیں کھانہ کھلاکر اس بات کو ثابت کردیا کہ مزہب نہیں سکھاتا آپس میں بیربیر رکھنا۔ شمیم احمد کا کہنا ہے کہ انہیں یہ جان کر بے حد دکھ اور افسوس ہوا کہ جس بنگال کی مٹی ہندو مسلم ایکتا کیلئے جانا جاتا ہے وہاں پر مذہب کے نام پر بے گناہوں کا خون بہایا گیا ۔ شمیم احمد نے مزید کہا کہ دنگا کرنے والے افراد مٹھی بھر ہوتے ہیں لیکن سیکولر مزاج کے لوگ زیادہ ہوتے ہیں اور اگر سیکولر مزاج کے لوگ ان دنگائیوں کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں تو یقین جانئیے کہ ملک سے دنگا فساد کا نام ونشان مٹ جائے گا۔ شمیم احمد کا ماننا ہے کہ جس دیش میں کروڑوں نوجوان بیکاری سے دم توڑرہے ہیں,اسپتالوں میں بیڈ نہیں ہیں,اسکولوں میں بنیادی سہولتوں کا فقدان ہے اور سب سے اہم بھوک سے روزانہ سینکٹروں بھوکے مارے جاتے ہوں وہاں ہندومسلم کے نام پر لوگوں کو بانٹا سب سے بڑا جرم ہے۔ اسی کے ساتھ شمیم احمد نے مطالبہ کیا کہ پارلیمنٹ میں دنگا مخالف قانون بنایا جانا چاہئے تاکہ جس ضلع میں دنگا یا فساد ہو سیدھا وہاں کے ڈی ایم,ایس پی سے ریپورٹ مانگنی چاہئے۔ بہرکیف شمیم احمد اور ان کی پوری ٹیم قابلِ ستائش ہے کہ ملک میں جہاں ایک جانب دھرم کے نام پر کھانا چھینا جارہا ہے وہیں شمیم احمد جیسے لوگ بلا تفریق وبلا امتیاز لوگوں کی بھوک مٹانے کی مہم میں کوشاں ہیں۔ FacebookTwitterGoogle+